Announcement

Collapse
No announcement yet.

دِل دَھڑکنے پہ بھی پابندی لگا دی جائے

Collapse
X
 
  • Filter
  • Time
  • Show
Clear All
new posts

    دِل دَھڑکنے پہ بھی پابندی لگا دی جائے



    دِل دَھڑکنے پہ بھی پابندی لگا دی جائے
    لاش اِحساس کی سُولی پہ چڑھا دی جائے

    ذِہن کی جامہ تلاشی کا بنا کر قانون
    سوچنے والوں کو موقعے پہ سزا دی جائے

    آرزُو جو کرے دیوانوں میں کر دو شامل
    خواب جو دیکھے اُسے جیل دِکھا دی جائے

    جاں بچانے کا پتنگوں کی بہانہ کر کے
    شمع جلنے سے بھی کچھ پہلے بجھا دی جائے

    روز خود سوزِیوں سے اُٹھتی ہے ہم پر اُنگلی
    خود کشی جو کرے گردَن ہی اُڑا دی جائے

    راہ بتلانے ، مدد کرنے کی عادَت نہ پڑے
    راستہ پوچھنے پہ قید بڑھا دی جائے

    لوگ خوشبو کے تعاقب میں نکل پڑتے ہیں
    پھول پر دیکھتے ہی گولی چلا دی جائے

    سانس لینے کے بھی اَوقات مقرر کر کے
    حَبس دَر حَبس کو دوزَخ کی ہَوا دی جائے

    کام تحریر مٹانے کا بہت بڑھنے لگا
    نعرے لکھے ہوں تو دیوار گرا دی جائے

    جبرِ حالات سے ہر شخص کو مجنوں کر کے
    بھیڑ میں قیس کی آواز دَبا دی جائے





    Kuch Aisay Haadsay Bhi Zindagi Mein Hoty Hain ~~~[email protected]~~~
    K Insan Bach To Jata Hai Magr Zinda Nahi Rehta.

    #2
    Re: دِل دَھڑکنے پہ بھی پابندی لگا دی جائے

    yani marshal law laga dia jae?
    We should care for each other more than we care for ideas, or else we will end up killing each other.

    Comment

    Working...
    X